16 Dec, 2017 | 27 Rabiul Awal, 1439 AH

Assalamoalikum. Main electrical Engineer hou aur meri team hai office main electrician ki, meri team k kaam main AC ka kaam nahi ata mgar jab koi AC kharab hota hai to mjhy kaha jata hai k ap kahi bahr say krwa kr to bill dey dein. Ab meray aik electrician ko AC ka kaam ata hai to kiya ye krna theek ho ga k main apnay hi electrician say kaam kr k to Jaali bill bana kr usko paisay dilwa dou??? ye krna jaez ho ga?? Meharbani farma dein. 0334-9565085

میں   الیکٹریکل انجینئر ہوں،  میری ڈیوٹی آفس میں الیکٹریشن کی ہے،  میرے کام میں  اے سی  ٹھیک کرنا  نہیں ہے، اور جب کبھی اےسی خراب ہوتا ہے، تو مجھے آفس والے کہتے ہیں کہ ا سکو باہرسے ٹھیک کرواکر لاؤ، اور بل  دے دیں۔ اب میرے ایک الیکٹریشن ، اے سی کا کام جانتا ہے، تو کیا   تو کیا میں اے سی اس  سے ٹھیک کروالوں  اور باہر سے اتنے پیسوں کا جعلی بل بنوالوں، اور اس کو پیسے دلواؤں ، تو کیا  ایسا کرنا درست ہے؟

الجواب حامدا ومصلیا

صورت مسؤلہ میں چونکہ جعل سازی اور  جھوٹ بولنا پڑتا ہے، اس لیے اس  طریقہ سے اجتناب کیا جائے۔

 البتہ آپ اس طرح  کرلیں کہ   آپ کا دوست اپنے نام کا پَیڈ بنوالے اور اس پر بل بنادیا جائے اور جھوٹ بولنے کی نوبت نہ آئے تو پھر  اس کی  گنجائش ہے، بشرطیکہ کام اسی معیار کا ہو، جس معیار کا باہر سے کرکے دیتے ہیں۔

سنن أبى داود: باب فى النهى عن الغش:

عن أبى هريرة أن رسول الله -صلى الله عليه وسلم- مر برجل يبيع طعاما فسأله « كيف تبيع ». فأخبره فأوحى إليه أن أدخل يدك فيه فأدخل يده فيه فإذا هو مبلول فقال رسول الله -صلى الله عليه وسلم- « ليس منا من غش ».  

واللہ اعلم بالصواب

      احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

  دارالافتاء ، معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۲۳؍ذی الحجہ؍۱۴۳۸ھ

              ۱۵؍ستمبر؍۲۰۱۷ء