21 Oct, 2017 | 30 Muharram, 1439 AH

Asslam o Alaikum 1. miswak karnay ka sunat tareeqa kya h? r miswak ka purana brush kitnay dino bad katey h? 2. jin ayam mai ortay{females} namaz nahi pharti kya wo un dino mai Quran pak ki ayat wazifay ya dua ya hifzat ki neyat c phar sakti h? 3. Sajday mai dua mangnay ka tariqa kya h? 4. jin dino mai ortay namaz nahi pharhati kya wo sajday mai dua mang sakti h? r kya jai namaz pay bayt skati h? 5. high blood pressure ko normal krnay k leyay koi dua ya ayat ya wazifa bta dain. 6. www.tasawwuf c kitnay dino bad reply atta h? mujay reply nahi a rha is leyey pouch rhai hoon. JAZAKALLAH U KHAIR

السلام علیکم !

1-  مسواک کرنے کا سنت طریقہ  کیا ہے؟

2-  مسواک کا پرانا پرش کتنے دنوں بعد کاٹا جائے؟

3- جن ایام میں عورتوں نے نماز نہیں پڑھنی ہوتی،  کیا ان دنوں میں  وہ قرآن پاک کی آیت، وظیفہ یا دعا حفاظت کی نیت سے پڑھ سکتی ہے؟

4-  سجدے میں دعا مانگنے کاطریقہ کیا ہے؟

5-  جن دنوں میں عورتیں نماز نہیں پڑھتیں، تو کیا ان دنوں میں وہ سجدہ میں دعا کرسکتی ہے؟ اور کیا جائے نماز پر وہ بیٹھ سکتی ہیں؟

6-   تیز بلڈ پریشر کو کم کرنے کے لیے کوئی وظیفہ بتلائیں۔

7-  تصوف ڈاٹ کام پر کتنے دنوں بعد جواب آتا ہے؟ مجھے جواب نہیں آرہا اس لیے پوچھ رہا ہوں۔

الجواب حامدا ومصلیا

1- مسواک دانتوں  کی چوڑائی میں کرنا چاہیے۔ مسواک کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ   پہلے دائیں جانب سے شروع کرے، اوپر اور  نیچے کےدانتوں کو  اندر باہر دونوں طرف سے صاف کرے، اس کے بعد سامنے کے دانتوں کو اسی طرح صاف کرے اور اس کے بائیں جانب کےکو اسی طریقے سے صاف کرے۔ مسواک کم ازکم تین مرتبہ  کرنا چاہیے اور ہر مرتبہ  نیا پانی لینا چاہیے۔ اور مسواک  دائیں ہاتھ سے استعمال کرنا چاہیے۔

2-   اس کے لیے کوئی مقرر  نہیں، جب  پرانا ہوجائے، یا  دانتوں کو صاف نہ کرتا ہو توکاٹ دیا جائے۔

3-  الحمد شریف کی پوری سورت ، آخری دو سورتیں، آیۃ الکرسی  ، اور اسی طرح دعا  پر مشتمل دیگر آیات قرآنی  کو  دعا اور حفاظت کے  طور پر پڑھ سکتی ہے، تلاوت کے طور پر پڑھنا صحیح نہیں ہے۔

4- فرض نمازوں کے سجدوں میں مسنون دائیں پڑھنا چاہیے۔ البتہ نفل نماز کے سجدو اور مسنون دعاؤں کے علاوہ اور دعائیں بھی  درست ہیں ، بشرطیکہ عربی زبان میں اور آخرت کے متعلق ہوں، اور نماز کے علاوہ دعا کے لیے الگ سے سجدہ کرنا جائز ہے بشرطیکہ نماز کے بعد نہ ہو، اور اس کا التزام بھی نہ کیا جائے اور اس کو سنت بھی نہ سمجھا جائے؛ کیونکہ شریعت میں یہ  ثابت(منقول ) نہیں ہے۔ کذا فی امداد الفتاوی، وفتاوی عثمانی)

5- عورت ان ایام میں دعا کے لیے سجدہ نہ کرے، بلکہ عام طریقہ سے ہی دعا مانگے۔ ایام کے دنوں میں عورت کا جسم پاک ہوتا ہے،  لہذا جائے نماز پر بیٹھنے میں کوئی حرج نہیں، البتہ بیٹھتے وقت احتیاط کرے کہ جائے نماز پر خوں وغیرہ کے دھبے نہ لگیں، اوراگر لگ جائیں تو ان کو دھودیا  جائے۔

6- جب بلڈ پریشر تیز ہو، اس وقت وضو کرلیں۔ اور دس مرتبہ درود شریف پڑھیں، اس کے بعد دس مرتبہ  ‘‘یا رَؤُوفُ’’ پڑھیں اور اس کے بعد آخر میں بھی دس مرتبہ درود شریف پڑھیں۔ ان شاء اللہ صحیح ہوجائے گا۔

البحر الرائق (1/ 21)

وكيفيته أن يستاك أعالي الأسنان وأسافلها والحنك ويبتدىء ( ( ( ويبتدئ ) ) ) من الجانب الأيمن وأقله ثلاث في الأعالي وثلاث في الأسافل بثلاث مياه. واستحب أن يكون لينا من غير عقد في غلط ( ( ( غلظ ) ) ) الأصبع وطول شبر من الأشجار المرة المعروفة

 ويستاك عرضا لا طولا لأنه يخرج لحم الأسنان ويستحب إمساكه باليد اليمنى.

الفقه الإسلامي وأدلته (1/ 401)

ثالثاً ـ كيفيته وأداته:

يستاك الشخص بيده اليمنى مبتدئاً بالجانب الأيمن، عرضاً في الأسنان (أي ظاهراً وباطناً) من ثناياه إلى أضراسه، ويذهب إلى الوسط ثم الأيسر.

الدر المختار (1/ 293)

( ولا بأس ) لحائض وجنب ( بقراءة أدعية ومسها وحملها وذكر الله تعالى وتسبيح ) وزيارة قبور ودخول مصلى عيد.

حاشية ابن عابدين (1/ 293)

قوله ( بقصده ) فلو قرأت الفاتحة على وجه الدعاء أو شيئا من الآيات التي فيها معنى الدعاء ولم ترد القراءة لا بأس به كما قدمناه عن العيون لأبي الليث وأن مفهومه أن ما ليس فيه معنى الدعاء كسورة أبي لهب لا يؤثر فيه قصد غير القرآنية.

شرح فتح القدير (1/ 168)

 وفي الخلاصة في عد حرمات الحيض وحرمة القرآن إلا إذا كانت آية قصيرة تجرى على اللسان عند الكلام كقوله { ثم نظر } { ولم يولد } أما قراءة ما دون الآية نحو { بسم الله } و { الحمد لله } إن كانت قاصدة قراءة القرآن يكره وإن كانت قاصدة شكر النعمة والثناء لا يكره ولا يكره التهجي وقراءة القنوت انتهى وغيره لم يقيد عند قصد الثناء والدعاء بما دون الآية فصرح بجواز قراءة الفاتحة على وجه الثناء والدعاء.

الفتاوى الهندية (1/ 136)

وأما إذا سجد بغير سبب فليس بقربة ولا مكروه وما يفعل عقيب الصلوات مكروه لأن الجهال يعتقدونها سنة أو واجبة وكل مباح يؤدي إليه فمكروه.

 واللہ اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ،معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۲۵؍محرم الحرام؍۱۴۳۸ھ

۲۷؍اکتوبر ؍۲۰۱۶ء