22 Oct, 2017 | 1 Safar, 1439 AH

Assalam u Alaikum me ne pehlay bi sawal pucha tha k kia asi kameez main namaz ho jae ge jis per birds ki picture bani ho agar un birds ko kisi lace ya feetay se silai kar k chupa dia jaye to kia namaz ho jae ge.

السلام علیکم! کیا کسی قمیض پر پرندے کی تصویر ہو اور آپ کوئی لیس  یا کوئی اور  چیز لگا کر سلائی کردیں جس سے اس کی شکل  اور ڈھانچہ چھپ جائے تو اس میں نماز ہوجائی گی؟

الجواب حامدا ومصلیا

جاندار کی تصویر والا کپڑا پہن کر نماز پڑھنا مکروہ تحریمی  ہے، البتہ اگر تصویر کو اس طرح   چھپا دیا جائے کہ وہ دیکھنے والے کو نظر نہ آئے ، تو اس میں نماز پڑھنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔  لہذا  صورت مسؤلہ  تصویر کو مکمل طور پر چھپا  نے کے بعد اس میں نماز پڑھنا بلا کراہت جائز ہے۔

البحر الرائق (2/ 29)

وهو يفيد أن المستبين في الخاتم تكره الصلاة معه ويفيد أنه لا يكره أن يصلي ومعه صرة أو كيس فيه دنانير أو دراهم فيها صور صغار لاستتارها ويفيد أنه لو كان فوق الثوب الذي فيه صورة ثوب ساترله فإنه لا يكره أن يصلي فيه لاستتارها بالثوب الآخر والله سبحانه أعلم .

 واللہ اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ،معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۹؍محرم الحرام؍۱۴۳۸ھ

۱۱؍اکتوبر ؍۲۰۱۶ء