22 Nov, 2017 | 3 Rabiul Awal, 1439 AH

"Assalmu Alaikum! Hazrat ji apse masla pochna tha k agr larki kisi ko apna wakeel bna kr nikah ki ijazat dy dy or wo wakeel larky or gawahon k samny larki ki taraf se hijab kabool kr ly to kia nikah munaqid ho jata hn.or jisy larki wakeel bna rhe ho wo rishty dar bhi na ho. plz guide me in this problem. Jazakumullah Khair.": 1.ye jo Nikah hwa hn isk bary me larki k waldain ko ni pata hai. 2.or larka larki k khandaan k barabar hn. kia ye nikah ho gya hn.

السلام علیکم !

اگر لڑکی  کسی کو اپنا وکیل بنا کر  نکاح کی اجازت دے۔ اور وہ وکیل دو گواہوں کی موجودگی میں لڑکی جانب سے لڑکے سے ایجاب قبول کرلے تو کیا نکاح ہوجائے گا جبکہ جس کو وکیل بنایا ہو، وہ رشتہ دار بھی بہ ہو؟

تنقیح : یہ نکاح والدین کی علم میں لاکر کیا جارہا ہے یا ان سے چھپاکر؟

جواب: یہ نکاح لڑکی اور لڑکا اپنے والدین سے چھپ کر کیا ہے۔   

الجواب حامدا ومصلیا

والدین سے چھپ کر نکاح کرنا  بہت ہی بری بات ہے، اسلام اس کو پسند  نہیں کرتا۔لہذا والدین کی رضامندی سے نکاح کریں۔  اور اس طرح خفیہ نکاح میں اکثر دھوکہ ہوتا ہے، پھر خفیہ  نکاح میں  شرائط  نکاح کا لحاظ بہت کم ہی رکھا جاتا ہے،  جس کی وجہ سے عام طور پراس طرح کا  نکاح  شرعاً منعقد ہی نہیں  ہوتا۔ اس لیے آپ اپنے نکاح کی ساری تفصیل  اپنے والدین وغیرہ  کو بتلائیں، اور دار الافتاء سے دوبارہ رجوع کریں۔

   واللہ اعلم بالصواب

      احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

  دارالافتاء ، معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

               ۲۶؍اکتوبر؍۲۰۱۷ء