22 Nov, 2017 | 3 Rabiul Awal, 1439 AH

میرے محترم میرا مسئلہ یہ ہے کہ جب گائے کو ذبح کیا جائے اور اس کی کال اتارنے کے بعد جب از کو ٹکڑے کرنے کے دوران خون کے کچھ قطرے کپڑوں پر گر جائے تو اس کپڑوں سے نماز پڑھنا جائزہے یا نہیں؟

میرے محترم میرا مسئلہ یہ ہے کہ جب گائے کو ذبح کیا جائے اور اس کی کال اتارنے کے بعد جب اس کو ٹکڑے کرنے کے دوران خون کے کچھ قطرے کپڑوں پر گر جائے تو اس کپڑوں سے نماز پڑھنا جائزہے یا نہیں؟

الجواب حامدا ومصلیا

گوشت میں جو خون  لگا رہ جاتا ہے، وہ پاک ہے ۔ اس کے لگنے سےکپڑے ناپاک نہیں ہوتے، البتہ ذبح کرتے وقت جوخون جانور کی رگوں سے نکلتا ہے ، وہ ناپاک ہے۔ لہذا صورت مسؤلہ میں گوشت کےٹکڑے کرنے کے دوران، گوشت سے نکلنے والاخون پاک ہے، اور اگر  کپڑوں پر لگ جائے تو ان کپڑوں  میں نماز پڑھنا بھی جائز ہے۔

الفتاوى الهندية (1/ 46)

وما لزق من الدم السائل باللحم فهو نجس كذا في منية المصلي دم الكبد والطحال ليس بنجس.

      واللہ اعلم بالصواب                  

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ،معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۲۷؍جمادی الثانی؍۱۴۳۸ھ

۲۷؍مارچ؍۲۰۱۷ء