16 Dec, 2017 | 27 Rabiul Awal, 1439 AH

Assalamualikum..... Agar kapde par Mani lag jaye aur us kapde ko ek Martba hee itna accha se dho Liya ke Mani ka nishan Bhi nahi Raha to. Kya us kapde mein namaz ho Sakti hai....kya wo kapde paak honge

کپڑے پر منی لگ جائے اور اس کپڑے کو ایک مرتبہ ہی ایسا اور اتنا اچھا دھویا جائے کہ منی کا نشان بھی نہ رہے تو  کیا اس سے کپڑا پاک ہوجائے گا یانہیں ؟ اس میں نماز پڑھنا بھی جائز ہوگا یا نہیں؟

                             الجواب حامدا ومصلیا                  

اگر کپڑے پر گاڑھی نجاست لگ جائے ، جیسے خون ، منی وغیرہ ، تو اس کو  پاک کرنے لیےسادے پانی سے اتنا دھونا ضروری ہےکہ  نجاست زائل ہوجائے اور اس  کا دھبہ اور بدبوختم ہوجائے، خواہ ایک مرتبہ سے ختم  ہویا تین،یا  اس سے زیادہ مرتبہ دھونے سے ختم ہو۔

لہذا صورت مسؤلہ میں ایک مرتبہ دھونے سےمنی کے نشان کے ختم ہوجانے کے بعد بھی  کپڑا پاک ہوگیا ہے، اس میں نماز پڑھنا جائز ہے۔

الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (1/ 328)

(وكذا يطهر محل نجاسة) أما عينها فلا تقبل الطهارة (مرئية) بعد جفاف كدم (بقلعها) أي: بزوال عينها وأثرها ولو بمرة أو بما فوق ثلاث في الأصح، ولا يضر بقاء أثر) كلون وريح (لازم) فلا يكلف في إزالته إلى ماء حار أو صابون ونحوه، الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (1/ 328)

 (قوله: أو بما فوق ثلاث) أي: إن لم تزل العين والأثر بالثلاث يزيد عليها إلى أن تزول ما لم يشق زوال الأثر. (قوله: في الأصح) قيد لقوله ولو بمرة. قال القهستاني: وهذا ظاهر الرواية، وقيل: يغسل بعد زوالها مرة، وقيل: مرتين، وقيل: ثلاثا كما في الكافي.

 واللہ اعلم بالصواب 

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ،معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۱۱؍رجب المرجب؍۱۴۳۸ھ

۹؍اپریل؍۲۰۱۷ء