22 Nov, 2017 | 3 Rabiul Awal, 1439 AH

mana apna dust ku 2 lakh rupay diay or kha ka is ki chani kharid ka rakh lu jab rat ziada hu tu is ko sale kar dana, abi chand din guzray thay ka muja pasu ki zarurat pari mana apna dust sa kha ka muja pasu ki zarurat ha ap chani sale kar du tu mara dust na zunar ku ku udar chani sale kar di ka wo 8 maha bad 2lakh 55 hazar rupay da ga mara dust na zunar sa mari mulaqat b karwi or mari ijazat sa he zunar sa suda kia tha ab zunar chani la kar farar hu gia ha or gib hu gia ha shaid kise bahar country chala gia ha jab ham na us ka baray ma thaqiq ki tu malum hua ka wo or lugu ka pasa la kar b farar hu gia ha ab ma ya puchna chata hu ka ma apna dust sa pasu ka mutalba kar sakta hu? agr kar sakta hu tu 2lakh rupy ka karga ya 2lakh55 hazar rupay ka?

میں نے اپنے دوست کودولاکھ روپے دیے اورکہاکہ اس کی چاندی خرید کے رکھ لو جب ریٹ زیادہ ہوتواس کو سیل کردینا، ابھی چند دن گزرے تھے کہ مجھے پیسوں کی ضرورت پڑی ،میں نے اپنے دوست سے کہاکہ مجھے پیسوں کی ضرورت ہے آپ چاندی سیل کردو تومیرے دوست نے سنارکو ادھارچاندی سیل کردی کہ وہ آٹھ ماہ کے بعد دولاکھ ۵۵ہزار روپے دے گا،میرے دوست نے سنار سے میری ملاقات بھی کروائی اورمیری اجازت سے ہی سنار سے سودا کیاتھا، اب سنار چاندی لے کرفرار ہوگیاہے اورغائب ہوگیا ہے ،شاید کسی باہر ملک چلا گیاہے،جب ہم نے اس کے بارے میں تحقیق کی تومعلوم ہو کہ وہ اورلوگوں کے پیسے لے کر بھی فرار ہوگیا ہے،اب میں یہ پوچھناچاہتاہوں کہ میں اپنے دوست سے پیسوں کامطالبہ کرسکتاہوں؟ اگر کرسکتاہوں تو کیادو لاکھ کاکرسکتاہوں یادولاکھ ۵۵ہزار کا؟(۱۰نومبر،عادل مومن)(۱۵)
الجواب باسم ملھم الصواب
صورت مسئولہ میں آپ اپنے دوست سے پیسوں کامطالبہ نہیں کرسکتے۔
‘‘(ومن امررجلا ببیع عبدہ فباعہ واخذ بالثمن رھنا فضاع فی یدہ اواخذبہ کفیلا فتوی المال علیہ فلاضمان علیہ)لان الوکیل اصیل فی الحقوق وقبض الثمن منھا ،والکفالۃ توثق بہ والارتھان وثیقۃ لجانب الاستیفاء فیملکھا۔’’(البحرالرائق:۲۹۳/۶)
‘‘وصح اخذہ رھنا وکفیلابالثمن،فلاضمان علیہ ان ضاع الرھن فی یدہ اوتوی المال علی الکفیل لان الجواز الشرعی ینافی الضمان۔’’(الدرالمختار:۵۲۳/۵)
                          الجواب صحیح                                                            واللہ تعالیٰ أعلم بالصواب
                        عبد الوہاب عفی عنہ                                                    عبدالرحمان
                        عبد النصیر عفی عنہ                                                   معھدالفقیر الاسلامی جھنگ
                        معھد الفقیر الاسلامی جھنگ                                         ۱۴۳۶/۱/۱۷ھ