22 Nov, 2017 | 3 Rabiul Awal, 1439 AH

Asalaam o Alaikum. Meri nani iddat mein hain 2 haftey se. Un ki umar 70+ hai. Kya wo iss doran meri behan ki shadi jo k 2 months baad issi shehr mein hai shareek hosakti hain?

السلام علیکم!

میری نانی عدت کے اندر ہے دو ہفتہ سے ۔ ان کی عمر ساٹھ سال ہے ، کیا وہ اس دوران میری بہن کی شادی جو  کہ دو مہینے بعد اسی شہر میں ہے، شریک ہوسکتی ہے؟

الجواب حامدا ومصلیا

جس عورت کا شوہر وفات پاگیا ہو، وہ اپنے شوہر کے گھر میں  چار مہینے دس دن تک عدت گذارے گی، اگر اس  کے پاس خرچ نہ ہو تو کسب معاش کی ضرورت کو پورا کرنے کے لیےدن کو  گھر سے نکل سکتی ہے، اسی طرح اپنے مال کی حفاظت کا کوئی اور ذریعہ نہ تو اس کے لیے بقدر ضرورت دن کو گھر سے نکل سکتی ہے، اسی طرح علاج معالجہ کی ضرورت سے گھر سے نکل سکتی ہے، اس کے علاوہ کسی اور وجہ سے وہ اپنے گھر سے نہیں نکل سکتی۔ لہذا صورت مسؤلہ میں آپ کی نانی شادی میں شریک نہیں ہوسکتی۔

فی فتح القدير (4/ 343)

فلا يحل لها أن تخرج لزيارة ونحوها ليلا ولا نهارا والحاصل أن مدار الحل كون غيبتها بسبب قيام شغل المعيشة فيتقدر بقدره فمتى انقضت حاجتها لا يحل لها بعد ذلك صرف الزمان خارج بيتها.

وفی البحر الرائق (4/ 166)

قوله ( ومعتدة الموت تخرج يوما وبعض الليل ) لتكتسب لأجل قيام المعيشة لأنه لا نفقة لها حتى لو كان عندها كفايتها صارت كالمطلقة فلا يحل لها أن تخرج لزيارة ولا لغيرها ليلا ولا نهارا . والحاصل أن مدار الحل كون خروجها بسبب قيام شغل المعيشة فيتقدر بقدره فمتى انقضت حاجتها لا يحل لها بعد ذلك صرف الزمان خارج بيتها كذا في فتح القدير.

واللہ اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ،معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۲۲؍جمادی الاول؍۱۴۳۸ھ

۱۹؍فروری؍۲۰۱۷ء