17 Nov, 2017 | 27 Safar, 1439 AH

I want to ask about women white discharge other than luchorea.according to the lady doctors this discharge is quite natural for the reason of keeping the women vigina wet.this discharge resembles like nasal discharge. I have heard that there is jadeed fatwa about this discharge that the discharge which is colourless odourless and without any sex desire.wadu will not be broken by this discharge. kindly explain me is dicharge ki vaja say wazu k kia aahkamat hain.

میں عورتوں کےلیکوریا کے علاوہ سفیدرنگ کے خارج ہونے والے مادے کے بارے میں پوچھناچاہتی ہوں،لیڈی ڈاکٹروں کے کہنے کے مطابق یہ خارج ہونےوالامادہ بالکل قدرتی ہے اوریہ عورت کی اس  جگہ کوگیلارکھنےکےلیے  ہوتا ہے،یہ خارج ہونے والامادہ ناک سے خارج ہونے والے مادے کے مشابہ ہوتاہے،میں نے سنا ہے کہ اس خارج ہونے والے مادے کے بارے میں جدیدفتویٰ یہ ہے کہ جوخارج ہونے والامادہ بے رنگ اوربو کے بغیر ہوتاہے اوربغیرکسی شہوانی خواہش کے نکلتاہے تواس طرح کے خارج ہونے والے مادے سے وضو نہیں ٹوٹتا،برائے مہربانی وضاحت فرمائیں کہ اس خارج ہونے والے مادے کے بارے میں وضو کے کیااحکامات ہیں؟(۱۵نومبر،نورین فاطمہ)(۳۸)

الجواب باسم ملھم الصواب

صورت مسئولہ میں خارج ہونے والامادہ کسی بھی طرح کاہو اس سے وضوٹوٹ جاتاہے اوریہ بات یادرکھیں کہ پربات فتویٰ نہیں ہوتی اور جدید فتویٰ کے بارے میں ہمیں علم نہیں اوراسے دیکھے بغیر اس کے بارے میں کچھ نہیں کہاجاسکتا۔

‘‘منھامایخرج من السبیلین من البول والغائط والریح الخارجۃ من الدبر والودی والمذی والمنی والدودۃ والحصاۃ الغائط یوجب الوضوء قل اوکثر۔’’(الھندیۃ:۹/۱)

الجواب صحیح                                                                                                                                                                                                                                                     واللہ تعالیٰ أعلم بالصواب 

              عبد الوہاب عفی عنہ                                                 عبدالرحمان                                   

         عبد النصیر عفی عنہ                                                    معھدالفقیر الاسلامی جھنگ

              معھد الفقیر الاسلامی جھنگ                                         ۱۴۳۶/۴/۲۶ھ