17 Dec, 2017 | 28 Rabiul Awal, 1439 AH

assalam o alaikum kia koi aurat apni bahan ke baitay say(jo taqreeab 18 1/2 saal ka hay) apnay badan ko dabwa sakti hay jaisay k (hips) agharcha dono main say kisi ko shahwat ka ghuman na ho

السلام علیکم !

کیا کوئی عورت اپنی بہن کے بیٹے سے جو تقریباً ساڑھے اٹھارہ سال کا ہے، اپنا بدن دبوا سکتی  ہے،  جیسے  کولہے  اگرچہ دونوں میں سے کسی کو  شہوت کا گمان نہ ہو ۔

 

<p dir="\&quot;RTL\&quot;" style="\&quot;text-align:" center;\"=""> الجواب حامدا ومصلیا

بھانجے سے بھی اس طرح بدن دبوانا بالکل صحیح  نہیں ہے، اس  سے اجتناب کرنا ضرروری ہے۔

فی الدر المختار (6/ 367)

 ( وما حل نظره ) مما مر من ذكر أو أنثى ( حل لمسه ) إذا أمن الشهوة على نفسه وعليها... وإن لم يأمن ذلك أو شك فلا يحل له النظر والمس.

واللہ اعلم بالصواب

احقرمحمد ابوبکر صدیق  غفراللہ لہ

دارالافتاء ،معہد الفقیر الاسلامی، جھنگ

۲۹؍صفر ؍۱۴۳۷ھ

۳۰؍نومبر ؍۲۰۱۶ء